267

روٹی کی قیمت بڑھنے کے بعد نانبائیوں کی چاندی

پشاور۔ ڈپٹی کمشنر نے اپنے اختیارات استعمال کرکے روٹی کی قیمت تو بڑھا دی لیکن نانبائیوں پر چیک رکھنے کی بجائے انہیں کھلی چھٹی بھی دیدی گئی ہے   اندرون شہر میں روغنی کی قیمت 20 روپے جبکہ 150 گرام روٹی 15 روپے میں فروخت ہوتی رہی گلبہار ٗ ہسپتال روڈ ٗ گنج ٗکوہاٹی ٗاندورن و بیرون رامداس ٗ بھانہ ماڑی ٗ کوہاٹ روڈ ٗ ہشتنگری اور قصہ خوانی میں کم وزن روٹی نئی قیمت پر فروخت ہوئی جس کی وجہ اہلیان پشاور نے صوبائی حکومت سے ضلعی انتظامیہ کے غیرذمہ دارانہ اقدام کانوٹس لینے اور ڈپٹی کمشنر کے تبادلے کامطالبہ کردیا ہے۔

 شہریوں کاکہناہے کہ عوامی مخالفت کے باوجود روٹی کی قیمت میں پانچ روپے اضافہ نے ضلعی انتظامیہ کے کارکردگی پرسوالیہ نشان کھڑا کردیاہے انہوں نے کہا کہ ہڑتال کے چند گھنٹوں کے اندر روٹی کی قیمت میں اضافہ صوبائی حکومت کی کمزوری کاواحد ثبوت ہے اہلیان پشاور نے صوبائی حکومت سے مطالبہ کیاہے کہ ضلعی انتظامیہ کے غیرذمہ دارانہ اقدام کا نوٹس لیتے ہوئے ڈپٹی کمشنر پشاور کو فوری طورتبدیل کیاجائے۔

سماجی روابط کی ویب سائٹس پر بھی پشاور کے شہریوں نے دل کھول کر اپنے دل کی بھڑاس نکالی جبکہ انجمن صارفین پشاور نے روٹی کے نرخ واپس لینے کا مطالبہ کیاہے فیس بک ٗ ٹوئٹر اور دیگر سماجی رابطوں کی ویب سائٹس پر تحریک انصاف حکومت کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔