751

پشاور میں پانچ افراد کاقتل ‘ کیس میں مزید انکشافات

پشاور۔پشاور کے نواحی علاقے چمکنی لالہ کلے میں پانچ افراد کو بیدردی سے قتل کرنیوالے قاتل بھائی نے دوران تفتیش سنسنی خیز انکشافات کئے ہیں قاتل نے واقعہ کو دہشتگردی کارنگ دینے کیلئے نائن ایم ایم پستول استعمال کیا ۔

واردات کے دوران مقتول دروازہ نہیں کھول رہا تھالیکن قاتل نے منت سماجت کرکے دروازہ کھلوایا اور پھر خون کی ہولی کھیلی بھائی ٗ بھاوج اور کمسن بھتیجوں کا قتل کرکے جائیداد ہڑپ کرنے کا منصوبہ بنایا تھا اس ضمن میں رابطہ کرنے پر ایس پی رورل شفیع اللہ گنڈا پور نے بتایاکہ قاتل جنید نے دوران تفتیش بتایاکہ وہ جنوری میں پاکستان آیا ہے اورلیکن بھائی اور خاندان والوں کو یہ تاثر دے رہا تھا کہ وہ اب بھی ترکی میں ہے ۔

پہلی بار والدہ کے پیسوں پر ترکی گیا لیکن بلغاریہ سے ڈی پوٹ ہوگیا دوبارہ ترکی گیا تو بھائی کو ایک لاکھ روپے بھجوانے کیلئے فون کیا تو وہ انکاری ہوگیا جس پر بہت غصہ آیا پیسہ نہ ہونے پر وہ جنوری میں دوبارہ پاکستان آگیا اور ہزار خوانی میں بہن کے گھر رہائش اختیار کرلی ایس پی کے مطابق قاتل ہر ہفتہ ایک ہزار روپے بہن کو دیتا تھا اس دوران بہنوئی عامر کے ساتھ ملکر بھائی کی جائیداد ہڑپ کرنے کا منصوبہ بنایا اور پھر منصوبہ بندی کے تحت بھائی ٗ بھاوج ٗ کمسن بچوں اور اس کی سالی کو قتل کردیا۔

ملزم نے دوران تفتیش بتایاکہ واقعہ میں 9 ایم ایم پستول اس لئے استعمال کی تاکہ پولیس اسے دہشتگردی کا رنگ دے کیونکہ سب کے علم میں تھاکہ وہ ترکی میں ہے اس لئے کچھ کو شک تک نہ ہوتا اور وہ بآسانی بھائی کی جائیداد ہڑپ کرلیتا لیکن اسے کیا معلوم تھاکہ وہ پکڑ جائے گا پولیس کے مطابق قاتل اکثر مقتول کو فون کرکے دھمکیاں دیا کرتا تھا کیونکہ اسے یہ شک بھی تھاکہ والدہ اور دو بہنوں کو بھی مقتول نے ہی قتل کرکے غائب کیا ہوا ہے پولیس کے مطابق مزید تفتیش جاری ہے ۔