221

صدرمملکت کا مصافحہ

صدرمملکت ممنون حسین شنگھائی تعاؤن تنظیم کے اجلاس میں بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی کیساتھ خوشگوار انداز میں مصافحہ کرتے ہیں میڈیا رپورٹس کے مطابق دونوں رہنما ایک ساتھ اپنی نشستوں کی طرف بڑھے اور غیر رسمی بات چیت بھی کی صدر مملکت ممنون حسین کانفرنس کے اجلاس سے خطاب میں افغانستان کے اندر جنگ بندی کو مثبت پیش رفت قرار دیتے ہیں وہ افغان رابطہ گروپ کے قیام کو خوش آئند بھی گردانتے ہیں وہ یہ بھی کہتے ہیں کہ امن ہماری مشترکہ خواہش ہے دوسری جانب اسلام آباد میں دفتر خارجہ کے ترجمان کا کہنا ہے کہ افغانستان میں متعلقہ فریق ہی امن و استحکام میں مدد دے سکتے ہیں ترجمان کا کہنا ہے کہ پاکستان افغانستان میں حالیہ امن اقدامات خصوصاً افغانیوں کی سرپرستی میں انکے اپنے طورپر شروع کردہ امن عمل کی حمایت کرتا ہے‘صدرمملکت کا خوشگوار مصافحہ‘ تعاون تنظیم کے اجلاس سے خطاب دفتر خارجہ کے ترجمان کا افغانستان کے حوالے سے بیان خطے کی صورتحال کے تناظر میں پاکستان کے کردار اور پالیسی کا عکاس ہے پاکستان نے ہمیشہ بھارت کیساتھ تصفیہ طلب اموربات چیت کے ذریعے نمٹانے کی کوشش کی جسے بھارت کسی نہ کسی بہانے سبوتاژ ہی کرتا رہا پاکستان نے ایک خودمختار اورآزاد ریاست کی حیثیت سے یہ بھی واضح کیا کہ ہماری امن کیلئے خواہش کو کسی سطح پر کمزوری نہ سمجھا جائے افغانستان کے کیس میں1979ء میں روسی یلغار سے لیکر اب تک پاکستان لاکھوں افغان مہاجرین کی میزبانی کیساتھ امن کے قیام کیلئے ایک مثبت کردار ادا کرتا چلا آرہا ہے ۔

دہشت گردی کیخلاف پاکستان کے اقدامات ریکارڈ کا اہم حصہ ہیں پاکستان اس سارے منظر نامے میں خود امن وامان کے حوالے سے سنگین صورتحال کا سامنا کرچکا ہے قیمتی انسانی جانوں کے ضیاع کیساتھ ہماری معیشت کو بہت بڑا نقصان پہنچ چکاہے انفراسٹرکچر کا نقصان اس سے علیحدہ ہے اس سب کے جواب میں پاکستان کو بے بنیاد الزامات کا سامنا کرنا پڑا جبکہ سب کچھ کرلینے کے باوجود ڈومور کے مطالبے سامنے آئے وقت آگیا ہے کہ عالمی برادری اب پاکستان کے مثبت کردار اور موقف کو سمجھے پاکستان مخالف بیانات پر شٹ اپ کال جاری کرے اورپاکستان کی اکانومی کو بہتر بنانے میں کردار ادا کرے تاکہ نقصانات کا ازالہ ہو سکے۔

پلاسٹک شاپنگ بیگ‘ ادھورا منصوبہ

پلاسٹک شاپنگ بیگز کے انسانی صحت‘ زندگی‘ ماحول اور سیوریج سسٹم پر مضر اثرات سے ماہرین مسلسل آگاہ کرتے چلے آرہے ہیں بعدازخرابی بسیار سہی خیبرپختونخوا حکومت نے ماضی قریب میں ان بیگز پر پابندی عائد کرنے کا عندیہ دیا ماہرین نے ان بیگز کے متبادل کے طورپر بائیو ڈی گریڈایبل تھیلے بھی متعارف کرادیئے ان تھیلوں کا استعمال ٹیسٹ کیس کے طورپر کامیاب رہا ہمارے ہاں حکومتوں کے لیول پر بہت سارے اعلانات عملدرآمد کا فول پروف نظام نہ ہونے پر صرف اعلانات ہی رہ جاتے ہیں دوسری جانب ایک حکومت کے شروع کردہ منصوبوں کی تکمیل میں دوسری حکومت عموماً زیادہ دلچسپی نہیں لیتی رہی خیبرپختونخوا میں پلاسٹک شاپنگ بیگز پر پابندی عوامی مفاد اور انسان صحت اور زندگی سے جڑی ہوئی ہے ضرورت اس ادھورے منصوبے کو عملدرآمد کے موثر نظام کیساتھ عملی صورت دینے کی ہے اس مقصد کیلئے سرکاری اداروں کیساتھ اگر بلدیاتی اداروں کی منتخب قیادت سے بھی تعاون حاصل کرلیا جاتا ہے تو گلی محلے کی سطح پر اقدامات میں آسانی ہوگی اور پوری کمیونٹی متحرک ہوجائیگی۔