350

سیاسی جماعتوں کے رات کے وقت جلسے جلسو ں پرپابندی

پشاور۔صو بائی حکو مت نے انتخابات کو پر امن اور با سہولت بنانے کی غرض سے رہنماء اصول وضع کر دےئے ہیں ٗان اصو لو ں کا بنیادی مقصد سیاسی پارٹیوں اور ان کے نمائندو ں کو جلسے جلوسوں میں سہو لیات مہیا کی جائیں گی ٗ اس کا مقصد الیکشن مہم کے دوران عوام کی دشواریوں کو کم کر نا ہے ٗان رہنماء اصو لو ں کے مطابق ہر سیاسی پارٹی ضلعی انتظامیہ سے جلسے جلوس منعقد کر نے سے قبل تحریری اجازت لے گی ٗضلعی انتظامیہ سکیورٹی کلےئرنس کے بعد متعلقہ امیدواریا پارٹی کو اجازت نامہ جاری کرے گی ٗاجازت نامے کے حصول کے لئے در خواست دیتے وقت متوقع جلسے کی جگہ اس میں اہم لیڈروں کی آمد کی تفصیلات اور متوقع ہجوم کی تفصیلات دی جائیں گی ٗتا کہ اس مناسبت سے سکیورٹی انتظامات کئے جا سکیں ٗ اس ضمن میں ضلعی کو آرڈنیشن کمیٹی قائم کر دی گئی ہے جس کے سر براہ ڈپٹی کمشنر ہو ں گے ٗ ڈی پی او اورمتعلقہ محکموں کے سر براہان کمیٹی کے ممبران میں شامل ہیں۔

ٗان میں پولیس ٗ محکمہ صحت ٗ سی اینڈ ڈبلیو ٗ ریسکیو 1122 ٗ متعلقہ ٹی ایم ایز اور ڈبلیو ایس ایس ای شامل ہیں ٗپولیس کا کام امن وامان قائم رکھنا ٗ ٹریفک کی روانی برقرا ررکھنا ہو گا ٗ محکمہ صحت عوامی جلسے کے قریب مطلوبہ ایمولینس سروس اور دیگر سہولیات کی فراہمی یقینی بنائے گا ٗسی اینڈ ڈبلیو اور ٹی ایم ایز مجوزہ جلسے کی جگہ کے قریب تجاوزات ختم ٗسپیڈ بریکرز ہٹانے مناسب جگہ پر پارکنگ ٗاسی طرح 1122 بھی فرائض کی انجام دہی کے لئے فائر بریگیڈ اور ایمولینس تیا رکھیں گے ٗ تمام سیای جماعتو ں پر ان ہدایات پر پابندی لازمی ہو گی ٗ ضلعی انتظامیہ کو آرڈیشن کمیٹی کے مشورے سے اور سحصیل انتظامیہ ضلعی انتظامیہ کے مشورے سے 2 سے 3 اور تحصیل میں 4 سے 5 مقامات کا انتخاب کر ے گی۔

جہاں سیای پارٹیاں اپنے جلسے منعقد کر سکیں گے تمام سیاسی جماعتو ں کو اس بات کا پابند کیا جائے گا کہ وہ دن کی روشنی یعنی صبح 8 سے شام 7 بجے جلسے جلوس کا اہتمام کر یں ٗ ان ہدایات کو نظر انداز کر نے پر متعلقہ سیاسی جماعت کی مقامی لیڈر شپ کسی بھی ناگہانی حادثے کی ذمہ دار ہو گی ٗاس بات کا بھی خیا ل رکھا جائے گا کہ کسی سیاسی جلسے و جلوس کی وجہ سے عام لو گو ں کو ٹریفک کی دشواریاں پیش نہ آئیں ٗکسی بھی سر کاری یا نیم سر کاری ادارے کی ملکیتی عمارت ٗ کھیل کا میدان ٗحوک یا سڑک پر کسی سیاسی سر گرمی کی اجازت نہیں ہو گی ۔