بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / کے پی میں اربوں ڈالرز کی سرمایہ کاری ، وزیر اعلی نے منظوری دیدی

کے پی میں اربوں ڈالرز کی سرمایہ کاری ، وزیر اعلی نے منظوری دیدی

وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خٹک نے پشاوراور رشکئی انڈسٹریل زون میں جدید طرز کی رہائشی بستیوں ، کرک میں آئل ریفائنری ،ہری پور میں پہلے سے مجوزہ مقام پر سیمنٹ پلانٹس لگانے، چترال میں تین ہائیڈل پاور پراجیکٹس کے قیام اور پورے صوبے میں ٹیوٹا کے بہتر انتظام و انصرام کیلئے تیز تر اقدامات کرنے کی ہدایت کی ہے۔ وہ آج ایک اعلیٰ سطح اجلاس کی صدارت کر رہے تھے جس میں وزیراعلیٰ کے معاون خصوصی برائے صنعت عبد الکریم، وزیراعلیٰ کے مشیر برائے ہاؤسنگ ڈاکٹر امجد، وزیراعلیٰ کے مشیر برائے ٹیکنکل ایجوکیشن ارشد خان، ایف ڈبلیو او کے نمائندوں، انتظامی سیکرٹریز، چیف ایگزیکٹیو آفیسر اور دیگر متعلقہ حکام نے شر کت کی۔
ایف ڈبلیو او نے اجلاس کو مذکورہ بالا منصوبوں سے متعلق تفصیلی بریفینگ دیتے ہوئے کہا کہ پشاور اور رشکئی صنعتی زونز میں جدید رہائشی بستیوں پر 7.02 بلین امریکی ڈالر،چترال میں تین ہائیڈل پاورپراجیکٹس پر 2.024 بلین امریکی ڈالر، کرک میں آئل ریفائنری کیلئے 625ملین امریکی ڈالر اور ہری پور میں سمینٹ پلانٹ کے قیام پر 245ملین امریکی ڈالرز کی سرمایہ کاری کی جائے گی انہوں نے یہ یقین بھی دلایا کہ ہائیڈل پاور کیلئے ٹرانسمیشن لائن بچھانے کاکام بھی ایف ڈبلیو او سرانجام دے گی ۔ ایف ڈبلیو او نے مزید یقین دہانی کرائی کہ وہ ان منصوبوں کیلئے معیاری خدمات فراہم کرے گی جس میں عالمی معیار کے ہسپتالوں، سکولوں کے قیام سمیت بجلی ، سوئی گیس ، پانی اور کھیلوں کے گراؤنڈز کی فراہمی شامل ہیں۔وزیراعلیٰ نے اجلاس سے خطاب میں ان منصوبوں کیلئے جلد سے جلد زمین کے حصول کی ہدایت کی۔
انہوں نے مذکورہ منصوبوں کیلئے ایف ڈبلیو او کے ساتھ منافع میں حصہ داری کی ضرورت پر بھی زور دیا ۔ وزیراعلیٰ نے سی پیک کے تناظر میں پشاور اور رشکئی ہاوسنگ سکیموں کو تیز رفتاری کے ساتھ مکمل کرنے کی ہدایت کی اور ان ہاوسنگ سکیموں کیلئے حصول اراضی کوجلدازجلد پلان کرنے کی بھی ہدایت کی تاکہ تجارتی ، کمرشل اور صنعتی سرگرمیوں کیلئے ہاؤسنگ کی ضروریات پوری کی جا سکیں۔وزیراعلیٰ نے اجلاس کے شرکاء کو ہدایت کی کہ وہ ہائیڈل پاور جنریشن کی فزیبلٹی رپورٹس جلد ازجلدتیار کریں تاکہ15-16 مارچ کو بیجنگ روڈ شومیں سرمایہ کاری کی غرض سے پیش کیا جا سکے اور چائینز کمپنیوں کو راغب کیا جا سکے۔ازدمک چائینز کمپنیوں کی نشاندہی کرکے ان کمپنیوں کے ساتھ مفاہمتی یاداشت پر دستخط کرے گی ۔
وزیراعلیٰ نے کہا کہ 1700 میگاواٹ ہائیڈل پاور کے منصوبے سی پیک کا حصہ ہوں گے جس پر پہلے سے اتفاق ہو گیا ہے اور اسے جے سی سی کے مئی میں منعقدہ اجلاس میں حتمی شکل دی جائے گی دریں اثناوزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خٹک نے صوبائی دارلخلافہ پشاور شہر میں سڑکوں کی تعمیر و بحالی، گلیوں کی پختگی اور پشاور شہر کی ترجیحی بنیادوں پر خوبصورتی پر کام کی رفتار تیز کرنے کی ہدایت کی ہے وہ پشاور کی خوبصورتی، سڑکوں اور فلائی اوورز کی تعمیر کے سلسلے میں وزیراعلیٰ ہاؤس میں ایک اعلیٰ سطح اجلاس کی صدارت کر رہے تھے ۔ سینئر وزیر بلدیات عنایت اﷲ، چیف سیکرٹری ، انتظامی سیکرٹریز، کمشنر پشاور، ڈی جی پی ڈے اے نے اجلاس میں شرکت کی ۔
وزیراعلیٰ نے فلائی اوورز ، پشاور کی خوبصورتی ، سڑکوں کی تعمیر کے سلسلے میں نیشنل کنسٹرکشن کمپنی کو ادائیگیوں کے طریقہ کار کا جائزہ لینے اور اس کے حل کیلئے ایک کمیٹی تشکیل دی جس کی سربراہی سیکرٹری لوکل گورنمنٹ کریں گے اور ممبران میں سی اینڈ ڈبلیو، سیکرٹری فنانس، ڈی جی پی ڈی اے اور این ایل سی کا نمائندہ شامل ہو گا۔ وزیراعلیٰ نے کہاکہ پشاور میں اندرون شہرگلیوں کو پختہ کرکے سڑکوں اور دیگر منصوبوں پر2.2 ارب روپے لاگت آئے گی جس کیلئے ضروری فنڈز فراہم کر دیئے گئے ہیں ۔
انہوں نے مزید ہدایت کی کہ زکوڑی لیولII فلائی اوور اور ورسک روڈ فلائی اوور پرکام شروع کیا جائے تاکہ ٹریفک کی روانی یقینی بنائی جا سکے ۔ انہوں نے پلوسی روڈ پر بھی کام شروع کرنے کی ہدایت کی اس کیلئے حکومت این ایل سی کو 50 فیصد ادائیگی کرے گی جبکہ باقی ماندہ ادائیگی طے شدہ فارمولہ کے مطابق کی جائے گی۔ پرویز خٹک نے کہاکہ حکومت 8 بلین روپے کی لاگت سے پشاور میں نکاسی آب کے منصوبوں پر کام کر رہی ہے وزیراعلیٰ نے ایم ڈی پی ڈی اے کو ہدایت کی کہ وہ ایم ڈی سوئی گیس کیساتھ اجلاس کریں تاکہ حیات آباد میں فوڈ سٹریٹ کیلئے سوئی گیس کی علیحدہ لائن ہو۔