بریکنگ نیوز
Home / انٹرنیشنل / براک اوباما نے ٹرمپ ٹاور کی جاسوسی کی،وکی لیکس کا انکشاف

براک اوباما نے ٹرمپ ٹاور کی جاسوسی کی،وکی لیکس کا انکشاف


واشنگٹن۔وکی لیکس نے انکشاف کیاہے کہ امریکا کے سابق صدر براک اوباما نے دوہزار سولہ میں ٹرمپ ٹاور کی جاسوسی کی اور ٹرمپ کے ٹیلیفون بھی ٹیپ کئے جبکہ اقوام متحدہ، اٹلی، جرمنی اور دیگر یورپی ملکوں اور میڈیا نمائندگان کو بھی جاسوسی کا نشانہ بنایا۔امریکی میڈیا کے مطابق امریکا سے متعلق خفیہ معلومات جاری کرنے والے ادارے وکی لیکس نے والٹ سات کے نام سے نئی دستاویزات جاری کی ہیں۔دستاویزات کے مطابق براک اوباما نے دوہزار تیرہ سے دوہزار سولہ تک اقوام متحدہ کے اس وقت کے سیکرٹری جنرل بان کی مون اور جرمن چانسلر مرکل کے درمیان ملاقات کی جاسوسی کی۔

اوباما کی ایجنسیوں نے اسرائیل اور اٹلی کے درمیان روابط کے مراسلے بھی چرائے۔مراسلوں میں اسرائیل کے وزیرعظم نیتن یاہو نے اٹلی سے درخواست کی تھی کہ وہ امریکی صدر براک اوباما کے ساتھ اختلافات ختم کرائے۔دو ہزار سولہ میں نہ صرف ٹرمپ ٹاور کی جاسوسی کی گئی۔بلکہ اس وقت کے صدارتی امیدوار کے ٹیلیفون بھی ریکارڈ کئے گئے۔امریکی صدر نے یورپی ملکوں کے رہنماں اینگلا مرکل، نکولس سرکوزی اور دیگر کی جاسوسی کرنے کے ساتھ میڈیا نمائندگان کو بھی نہیں بخشا۔ ایجنسیوں نے امریکی اخبار واشنگٹن پوسٹ اور دیگر میڈیا نمائندگان کی بھی جاسوسی کی۔