بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / جمرودمیں کوئلہ حصص تقسیم کا تنازعہ حل

جمرودمیں کوئلہ حصص تقسیم کا تنازعہ حل


جمرود ۔ درہ آدم خیل کے پانچ اقوام کے جرگہ ثالثان نے اس دیرینہ تنازعے کو حل کرنے میں مخلصانہ کوششیں کیں اور آخر کار ایک متفقہ فیصلہ سنانے میں کامیاب ہوئے ۔عرصہ 13سال سے درہ آدم خیل کے ایک قوم اخوروال میں کوئلہ حصص کی تقسیم اور حصہ داری پر تنازعہ چلا آ رہا تھا جس میں تین فریق بلاقی خیل ،گڈیا خیل اور پیروال خیل ایک دوسرے کے ساتھ اس مسئلہ میں الجھے ہوئے تھے اس تنازعہ میں متعدد مرتبہ فیصلے بھی ہوئے ہیں۔

لیکن پھر مختلف فورم پر ان فیصلوں کو چیلنج کیا گیا ۔قوم اخوروال کے اس دیرینہ مسئلے کو دیکھتے ہوئے گاؤں بازی خیل کے مشران نے ثالثی کی پیش کش کو قوم اخوروال کے تمام فریقین نے قبول کیا اور درہ آدم خیل کے سارے قوموں سے متفقہ جرگہ ممبران تشکیل دے دئیے گئے اور گاؤں بازی خیل محمد زمان حجرہ میں جرگہ کا آغاز ہوا جرگہ ممبران میں ملک حاجی بازگل ،ملک اکبر خان ،ملک حاجی جمیل ،ملک حاجی سلیم ،ملک حاجی محمد صادق ،ملک حاجی لعل محمد اور محمد زمان شامل ہیں اس مسئلے کو حل کرنے کیلئے جرگہ کے چار نشستیں ہوئیں اور کافی بحث و مباحثہ کے بعد باہمی اتفاق سے قوم اخوروال کے حصص کا فیصلہ سنا دیا گیا اس موقع پر پولیٹیکل انتظامیہ ایف آر کوہاٹ کی نمائندگی پولیٹیکل تحصیلدار نیک محمد نے کی فیصلہ سناتے وقت درہ آدم خیل کے پانچ اقوام کے مشران ،کوئلہ مائنران ،معزز شخصیات کے ساتھ قوم جواکی اور کالا خیل کے نمائندے اور قوم اخوروال کے تمام فریقین بھی موجود تھے۔

اس فیصلے کے مطابق فریق اول پیروال خیل کیلئے 26.5فی صد حصہ مقرر کیا گیا جبکہ فریق دوئم گڈیا خیل اور بلاقی خیل کیلئے 73.5فی صد حصہ مقرر کیا گیااس موقع پر سکیورٹی کے فرائض صوبیدار میجر فیاض کی سربراہی میں لیویز فورس نے ادا کئے۔اس موقع پر مردان سے خصوصی طور پر مدعو کیے گئے مفتی سجاد الحجابی نائب امیر ختم نبوت ضلع مردان نے قوم اخوروال کی یکجہتی، اتفاق واتحاد اور بھائی چارے کیلئے خصوصی دعا کی آخر میں قوم اخوروال کے مشران و کشران نے گاؤں بازی خیل کے مشران کے ثالث کے کردار کو سراہا اور تہہ دل سے ان کا شکریہ ادا کیافیصلہ سنانے کے بعد کندے پیروال خیل کے نمائندوں نے اس فیصلے پرصلاح مشورے کیلئے دس دن کا وقت دینے کی درخواست کی جسے جرگہ ممبران نے خوشی سے قبول کیا۔