بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / پاکستان کی سرزمین پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہو سکتا، لیفٹیننٹ جنرل عامر ریاض

پاکستان کی سرزمین پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہو سکتا، لیفٹیننٹ جنرل عامر ریاض

چمن ۔ کمانڈر سدرن کمانڈ لیفٹیننٹ جنرل عامر ریاض نے کہا ہے کہ پاکستان کی سرزمین اور علاقہ کے حوالے سے کوئی بات یا سمجھوتہ نہیں ہو سکتا پاک افغان بارڈر اس وقت تک بند رہے گا جب تک افغانستان اپنے طریقہ اور رویہ کو ٹھیک نہیں کرتا۔ نادان رویہ افغانستان کے حق میں نہیں، پاکستان میں آنے کی کوشش پر ہمیں افغانستان کی چار سے پانچ پوسٹیں تباہ کرنا پڑیں۔ جواب دینا ہماری مجبوری تھی۔ چمن واقعہ افغانستان کی جانب سے نادان قسم کی شرارت ہے، نادان شرارت سے اپنا ہی نقصان کیا جا رہا ہے۔

ان خیالات کا اظہار کمانڈر سدرن کمانڈ نے سول ہسپتال چمن میں افغان بارڈر پولیس کی فائرنگ سے زخمی ہونے والوں کی عیادت کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ واقعہ افغانستان کی جانب سے نادان قسم کی شرارت ہے، نادان شرارت سے اپنا ہی نقصان کیا جاتا ہے، اپنی نادانی پر افغان فورسز کو شرمندگی ہونی چاہیئے۔ افغان فورسز کی جارحیت کا جواب دینے کے لئے ہمیں افغانستان کی چار سے پانچ پوسٹیں تباہ کرنا پڑیں ان کا کہنا تھا کہ جس نے بھی شرارت کی ہے یہ ایک نادان شرارت ہے۔ اس کا دونوں ملکوں کو کوئی فائدہ نہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ افغان فورسز نے پاکستان میں داخل ہونے کی کوشش کی جواب دینا ہماری مجبوری تھی۔ ان کا کہنا تھا کہ فلیگ میٹنگ کا نتیجہ ضرور نکلے گا لیکن پاکستان کی سرزمین کے حوالے سے کوئی بات نہیں ہو سکتی جو پاکستان کے علاقہ میں آ کر کوئی تنازعہ پیدا کرنے کی کوشش کرے گا ۔

اس کا پہلا جواب یہی ہے جو دو روز قبل ہم نے ان کو دیا تھا۔ میرا خیال ہے کہ جو افغان لوگ بات چیت کے لئے آئے ہوئے ہیں۔ ان کو بھی اس چیز کا ادراک ہو گا اور اس چیز کی سمجھ ہو گی کہ بلاوجہ کسی ایک چیز کو متنازعہ بنانے کی ضرورت نہیں ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ بہت سارے لوگ ان معاملات کو دیکھ رہے ہیں۔ لیفٹیننٹ جنرل عامر ریاض کا کہنا تھا کہ پاک افغان بارڈر اس وقت تک بند رہے گا۔ جب تک افغانستان اپنے طریقہ اور اپنے رویہ کو ٹھیک نہیں کرتا۔

نادان رویہ افغانستان کے حق میں نہیں۔ کورکمانڈر سدرن کمانڈر نے زخمیوں کو اطمینان دلایا کہ پاک فوج ان کی ہر قسم کی مدد کے لئے تیار ہے۔ زخمیوں نے کورکمانڈر سدرن کمانڈ کو یقین دلایا کہ وہ پاک فوج کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں۔ انہیں فخر ہے کہ وہ پاکستانی دفاع کے لئے زخمی ہوئے ہیں۔ لیفٹیننٹ جنرل عامر ریاض کا کہنا تھا کہ ہمیں اس بات پر فخر نہیں کہ ہم نے افغان توپوں کا بھرپور جواب دیا اور پانچ سے چھ پوسٹیں تباہ کیں۔

ہمیں افسوس ضرور ہے افغان فورسز اشتعال کر رہی تھیں اور پاکستانی حدود میں داخل ہونے کی کوشش کر ر ہی تھیں۔ وہ پاکستان کی شہری آبادی پر شیلنگ کر رہے تھے۔ اس کا بھرپور جواب دیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ مردم شماری اور دیگر معاملات کو ہم بات چیت کے ذریعے حل کرنا چاہتے ہیں۔ امید ہے کہ یہ معاملہ جلد حل ہو جائے گا۔