بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / خیبر پختونخوا حکومت کا چالڈ لیبر سروے کرانیکا اعلان

خیبر پختونخوا حکومت کا چالڈ لیبر سروے کرانیکا اعلان

پشاور۔خیبر پختونخوا حکومت نے مردم شماری کے فوراً بعد صوبے بھر میں ’’چائلڈ لیبر ‘‘ سروے کا فیصلہ کرتے ہوئے 2017ء کے آخر تک صوبائی پالیسی متعارف کرانے کا اعلان کیا ہے چائلڈ لیبر کے حوالے سے ملک میں پہلا واحد سروے 1996ء میں کیا گیا تھا جس کی رو سے خیبر پختونخوا میں 1.058ملین بچے معاشی طور پر فعال گردانے گئے تھے تاہم یہ اعداد و شمار بھی اب مشکوک ہوگئے ہیں جس پر موجودہ صوبائی حکومت نے تازہ اعداد و شمار کیلئے صوبے بھر میں سروے کیلئے رقم مختص کر دی ہے اور مردم شماری کے فوراً بعد خیبر پختونخوا میں چائلڈ لیبر سروے کا آغاز کیا جائے گا جس کی تکمیل رواں سال کے آخر تک ہوگی ذرائع کے مطابق صوبائی حکومت نے چائلڈ لیبر کی حوصلہ شکنی کیلئے قانون برائے ممانعت نو عمری کی مشقت مجریہ 2015ء کا نفاذ کیا ہے جس کے مطابق قانون کی خلاف ورزی کے مرتکب افراد کو سزائیں دی جاتی ہیں اس کے علاوہ محنت و افراد قوت ڈیپارٹمنٹ نے نو عمری کی مشقت کے حوالے سے ایک دفتر بھی کھولا ہوا ہے جو اس اہم ایشو کی نگرانی کرتا ہے ذرائع کا کہنا ہے کہ صوبائی حکومت نے چائلڈ لیبر کیلئے پالیسی بنانے کا بھی فیصلہ کیا ہے یہ پالیسی تمام جہتوں کا احاطہ کرے گی جو مجوزہ سروے میں سامنے آئیں گی پالیسی کے تحت چائلڈ لیبر کے خاتمے کیلئے ایک مربوط نظام فراہم کیا جائے گا ۔