بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / خیبر پختونخوا اسمبلی کی 4سالہ کارکردگی رپورٹ جاری

خیبر پختونخوا اسمبلی کی 4سالہ کارکردگی رپورٹ جاری

پشاور۔خیبرپختونخوا اسمبلی کے چارپارلیمانی سال مکمل ہوگئے جس کے حوالے سے چار سالہ کارکردگی رپورٹ جاری کردی گئی جس کے تحت چار سالوں کے دوران مجموعی طورپر143بلوں اور آرڈیننسز کی منظوری دی گئی جبکہ 162قراردادیں منظور کی گئیں،۔

صوبائی اسمبلی اجلاس کے دوران منگل کے سپیکر اسد قیصر نے اسمبلی کی چار سالہ کارکردگی رپورٹ پیش کرتے ہوئے کہا کہ چار سالوں کے دوران مجموعی طور پر اسمبلی نے 143بلوں اور آرڈیننسز کی منظوری دی ،اسمبلی سیکرٹریٹ میں 5482سوالات ارکان کی جانب سے جمع کرائے گئے جبکہ ان میں سے 1083ایوان میں پیش ہوپائے،1231توجہ دلاؤ نوٹس اسمبلی میں جمع اور182 ایوان میں لائے گئے،252تحاریک التواء جمع ہوئیں اور38 ایوان میں لائیں گئی۔

،اسمبلی میں 1043قراردادیں جمع ہوئیں اور 162کو ایوان میں پیش کیاگیا جبکہ قائمہ کمیٹیوں کے مجموعی طورپر288اجلاس منعقد ہوئے ۔انہوں نے کہا کہ اسمبلی کے جاری چوتھے سال کے دوران 6سیشنز میں100 دنوں کی کاروائی مکمل کی گئی جن میں 37سرکاری بلوں میں سے29منظور اور2 سلیکٹ کمیٹی کے پاس ہیں جبکہ 21بلوں میں سے5منظوراورایک سلیکٹ کمیٹی کے پاس ہے۔

سپیکر نے کہا کہ جن بلوں کی منظوری دی گئی ان میں صوبہ میں نجی قرضوں پر سودخاتمے کا بل بھی شامل ہیں ،اسمبلی میں 1826سوالات پیش اور198کے جوابات دیئے گئے ،397توجہ دلاؤ نوٹس پیش اور36کے جوابات دیئے گئے،53 تحاریک التواء میں سے2پیش ہوئیں جبکہ 206 جمع کردہ قراردادوں میں سے46 ایوان میں لائی جاسکیں اور قائمہ کمیٹیوں کے 35 اجلاس منعقد ہوئے ۔کارکردگی کے اعتبار سے اسمبلی کے ٹاپ 10ارکان میں ثوبیہ شاہد،نجمہ شاہین،مفتی سید جانان ،سردارحسین چترالی،صاحبزادہ ثناء اللہ ،ملک نور سلیم ،سرداراورنگزیب نلوٹھہ،مفتی فضل غفور،محمد علی اور فخر اعظم وزیر شامل ہیں ۔سپیکر اسد قیصر نے اس موقع پر کہا کہ اسمبلی کی چار سالہ کارکردگی تسلی بخش ہے اور اسی کارکردگی کی بنیاد پر ہم اپنے حلقوں میں عوام کے پاس جائیں گے ۔

عوامی نمائندوں نے ریکارڈ قانون سازی کرتے ہوئے عوام کو فائدہ پہنچایا اور اس سلسلے میں خواتین ارکان کا کردار بھی قابل ستائش ہے ۔