بریکنگ نیوز
Home / انٹرنیشنل / کابل دھماکوں کے بعد سیکورٹی مزید سخت

کابل دھماکوں کے بعد سیکورٹی مزید سخت


کابل ۔افغانستان کے دارالحکومت کابل میں گزشتہ روز ہونے والے 3 دھماکوں کے بعد سیکورٹی مزید سخت کردی گئی ہے جبکہ حکومت نے سلامتی کے خدشے کے پیش نظر عوام سے جلوس اور مظاہرے نہ کرنے کی اپیل کردی،دوسری جانب گزشتہ روز ہونیو الے تین دھماکوں میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد24 ہوگئی ۔افغان میڈیا رپورٹس کے مطابق کابل میں گزشتہ روز ہونے والے 3 دھماکوں کے بعد سیکورٹی مزید سخت کردی گئی ہے جبکہ حکومت نے سلامتی کے خدشے کے پیش نظر عوام سے جلوس اور مظاہرے نہ کرنے کی اپیل کردی۔

دوسری جانب گزشتہ روز ہونیو الے تین دھماکوں میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد24 ہوگئی ہے ۔ 100 کے قریب افراد مختلف ہسپتالوں میں زیر علاج ہیں جن میں سے بیشتر کی حالت تشویشناک بتائی جاتی ہے جس کے باعث ہلاکتوں میں مزید اضافے کا خدشہ ظاہر کیاجارہا ہے سینیٹ کے ڈپٹی فرسٹ اسپیکر کے بیٹے محمد سالم ایزدیار کے جنازے کے اجتماع میں ہوئے ان حملوں میں صحت عامہ کے وزیر فیروزالدین فیروز بھی زخمی ہو گئے، تدفین کی اس تقریب میں ملکی چیف ایگزیکٹیو عبداللہ عبداللہ اور وزیر خارجہ کے علاوہ دیگر اعلی حکومتی شخصیات بھی شریک تھیں۔ تاہم یہ سب محفوظ رہے۔ کسی گروہ نے اس خونریز کارروائی کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔

طالبان نے ٹویٹر کے ذریعے جاری بیان میں حملے میں ملوث ہونے کی تردید کی ہے طالبان ترجمان ذبیح اللہ مجاہد کا کہنا تھاکہ انکی تحریک کا نمازجنازہ میں ہونے والے دھماکوں سے کوئی تعلق نہیں ہے مجاہد نے دعویٰ کیا کہ واقعہ اندرونی تنازعے اور دشمنی کا شاخسانہ ہے یاد رہے کہ کابل میں جب پولیس نے گزشتہ روز مظاہرین پر فائرنگ کی تو اس کے نتیجے میں ہلاک ہونے والوں میں سالم ایزدیار بھی شامل تھے۔