بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / پشاور دہشت گردوں سے محفوظ بنا دیا گیا

پشاور دہشت گردوں سے محفوظ بنا دیا گیا

پشاور۔52 سے زائد مرتبہ دہشتگردی کا نشانہ بننے ور کالعدم تنظیموں کے گڑھ متنی ٗ ارباب ٹاپو ٗ غازی آباد ٗ میرہ متنی اور قادر آباد سمیت دیگر علاقے اب ملک دشمنوں کے قبضے سے چھڑا لئے گئے ہیں پولیس نے جان کی قربانیاں دیکھ علاقے کو دہشتگردوں سے پاک کرکے حکومت کی قائم کی اور اب یہ مقامات ایک پرامن علاقے میں تبدیل ہوچکے ہیں کچھ عرصہ قبل متنی کاعلاقہ قانون نافذ کرنیوالے اداروں کیلئے نو گو ایریا بن چکاتھااور ان علاقوں میں کئی اہم طالبان کمانڈر مقیم تھے۔

ماضی میں یکے بعد دیگر دہشتگردوں کا نشانہ بننے والے متنی میں تعینات پولیس اہلکاروں کے حوصلے بلند کرنے کیلئے چیف کیپٹل سٹی پولیس محمد طاہر خان اور ایس ایس پی آپریشنز سجاد خان نے صحافیوں کے ہمراہ دورہ کیا اس موقع پر ایس پی صدر ڈویژن شوکت خان ٗ ڈی ایس پی صدر سرکل رحمت اللہ خان اور دیگر حکام بھی موجود تھے اس موقع پر افسران اور صحافیوں نے پولیس اہلکاروں کے ساتھ ملکر افطاری بھی کی میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے ایس ایس پی آپریشنز سجاد خان کا کہناتھا کہ ماضی میں متنی کے علاقوں کو سب سے زیادہ ہشتگردی کا نشانہ بنایاگیا افطاری کا مقصد جوانوں کے حوصلے بلند کرنا تھا ۔

انہوں نے کہاکہ ارباب ٹاپو چیک پوسٹ پر 7 حملے ہوئے جن میں 4 اہلکار جاں بحق ٗ متنی تھانے پر 7 حملے ہوئے جن میں ایک اہلکار جاں بحق ٗ تین زخمی ٗ غازی آباد پر دو حملوں میں دو اہلکار جاں بحق 11 زخمی ٗ قادر آباد میں ایک حملہ ہوا جس میں 4اہلکار جاں بحق 11 زخمی ٗ جانے خوڑ پر ایک حملے سمیت مجموعی طور پر 52 حملے ہوئے جن میں جوانوں نے ملک دشمن عناصر کا ڈٹ کا مقابلہ کیا اور جانوں کا نذرانہ بھی پیش کیا ایس ایس پی کا کہناتھاکہ میرہ متنی پولیس چوکی جس مقام پر قائم کی گئی وہ طالبان کمانڈر کا گھر تھا اس کے علاوہ کئی مقامات ہیں جو طالبان کے گڑھ تھے لیکن اب وہاں پولیس نے مکمل طور پر قبضہ کیا ہوا اور حکومتی رٹ بحال ہے ۔