بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / خیبرپختونخواکے 28اعلیٰ افسران کی اگلے ماہ رخصتی

خیبرپختونخواکے 28اعلیٰ افسران کی اگلے ماہ رخصتی


پشاور۔پشاورہائی کورٹ نے عبدالولی خان یونیورسٹی مردان کے طالبعلم مشال کے قتل کیس کی سماعت مردان سے دوسرے ضلع منتقل کرنے کیلئے دائررٹ پٹیشن کی سماعت گیارہ جولائی تک ملتوی کردی عدالت عالیہ کے چیف جسٹس یحیی آفریدی اور جسٹس ناصرمحفوظ پرمشتمل دورکنی بنچ نے گذشتہ روز مشال خان کے والداقبال خان کی جانب سے دائررٹ پٹیشن کی سماعت کی اس موقع پران کے وکیل عبداللطیف آفریدی نے عدالت کو بتایا کہ عبدالولی خان یونیورسٹی کے طالبعلم مشال خان کو گذشتہ ماہ ایک سازش کے تحت یونیورسٹی کے اندربے دردی سے قتل کردیاگیاہے اوراس کی لاش کی بے حرمتی بھی کی گئی ہے جبکہ اس حوالے سے جائنٹ انویسٹی گیشن ٹیم نے بھی اپنی رپورٹ میں مشال پرعائد الزامات کوبے بنیادقرار دیاہے اورقتل کی ذمہ داری یونیورسٹی انتظامیہ اوربعض طلباء پرعائد کی گئی ہے جن میں بیشترکو گرفتارکرلیاگیاہے اوراب قتل کیس کی سماعت مردان کی انسداددہشت گردی کی خصوصی عدالت میں جاری ہے تاہم ملزموں کی جانب سے انہیں ہراساں کیاجارہا ہے اورراضی نامے کے لئے دباؤبھی ڈالاجارہا ہے۔

اس بناء قتل کیس کی سماعت مردان کی بجائے ہری پوریاکسی دوسرے ضلع میں کی جائے جبکہ صوبائی حکومت اس حوالے سے اپنی آمادگی بھی ظاہرکرچکی ہے رٹ کی سماعت کے موقع پرمقدمے کے ملزموں کی جانب سے متعدد وکلاء نے وکالت نامے پیش کئے اورموقف اختیار کیاکہ انہیں بھی سناجائے کیونکہ63افراد کو قتل میں ملزمان نامزد کیاگیاہے اوران کا ہری پورمقدمے کی سماعت کیلئے آنے جانے سے مشکلات پیدا ہوں گی فاضل بنچ نے ملزموں کے وکلاء کو سننے کیلئے سماعت گیارہ جولائی تک ملتوی کردی