بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / وزیر اعظم کا استعفیٰ ٗمسلم لیگ (ن) دو دھڑوں میں تقسیم

وزیر اعظم کا استعفیٰ ٗمسلم لیگ (ن) دو دھڑوں میں تقسیم


اسلام آباد۔ مسلم لیگ ’ن‘ وزیرا عظم کی استعفیٰ پر دو دھڑوں میں تقسیم ہوگئی وزیر اعلیٰ شہباز شریف اور وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان گروپ نواز شریف کے استعفیٰ کا حامی ہے جبکہ خواجہ سعد رفیق اور خواجہ آصف گروپ نواز شریف کے وزارت عظمیٰ کے حق میں ہے ۔میڈیا رپورٹس کے مطابق سپریم کورٹ میں جے آئی ٹی رپورٹ پیش ہونے کے بعد مسلم لیگ (ن) دو دھڑوں میں تقیسم ہوگئی ہے جس میں شہباز شریف اور وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان گروپ نواز شریف کے وزارت عظمیٰ سے استعفیٰ کا حامی ہے نواز شریف کو اب پارٹی ساکھ بچانے کیلئے مستعفی ہوجانا چاہیے اسلئے وزیر داخلہ چوہدری ن نثار علی خان نے سپریم کورٹ میں جے آئی ٹی رپورٹ پیش ہونے کے بعد نواز شریف کی زیر صدارت ہونے والے 4مشاورتی اجلاسوں میں شرکت نہیں کی اور نہ ہی نواز شریف اور چوہدری نثار کا کوئی رابطہ ہوا لیکن دونوں کے درمیاں وزیرا علیٰ پبجاب شہباز شریف رابطے کا کردار ادا کررہے ہیں ۔

اور دبدھ کے روز اسی سلسلے میں شہباز شریف اور وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان کے درمیان پنجاب ہاؤس میں ملاقات ہوئی اور موجودہ سیاسی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا اور دوسرے جانب خواجہ سعد رفیق اور خواجہ آصف گروپ ہے جو کہ نواز شریف کے وزارت عظمی کے حق میں ہے اور نواز شریف اس وقت اہم فیصلے میں مشاورت خواجہ آصف سے لے رہے ہیں ۔

خواجہ آصف نے نواز شریف کو رائے دی ہے کہ جے آئی ٹی رپورٹ پر سپریم کورٹ میں بھرپور طریقے سے قانونی جنگ لڑی جائے اور مخالفین کو ٹف ٹائم دیا جائے واضح رہے کے عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید احمد نے بھی دعویٰ کیا ہے کہ مسلم لیگ ن میں 44ایم این ایز کا ایک دھڑا بن چکا ہے اور مسلم لیگ ن کے اندر مری کے ایک ایم این اے کو وزارت عظمی دینے کیلئے مشاورت جاری ہے مسلم لیگ ن کے اندر گروپ بندی کی خبریں اس وقت زور پکڑنا شروع ہوئیں جب وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے جے آئی ٹی پر پراسرار خاموشی اختیار کرلی تھیکہا جارہا ہے کہ جوہدری نثار علی خان باغی دھڑے کی تیاری کررہے ہیں۔