بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / نوازشریف کو جانا ہوگا،عمران خان

نوازشریف کو جانا ہوگا،عمران خان


اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف ( پی ٹی آئی) کے سربراہ عمران خان نے وزیر اعظم نواز شریف کو خبردار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ابھی بھی وقت ہے، انہیں استعفیٰ دے دینا چاہئیے، ورنہ اس بار وہ جدہ نہیں اڈیالا جائیں گے۔

عمران خان نے کہا کہ وزیر اعظم نواز شریف کی ساری کابینہ کرپشن چھپانے میں مصروف ہے، جب کہ شریف خاندان کی جانب سے کمپنیاں اور کارخانے کرپشن کا پیسہ ری سائیکل کرنے کے لیے بنائی گئیں۔

پریس کانفرنس کرتے ہوئے عمران خان نے الزام عائد کیا کہ زیراعظم نواز شریف بزنس کے بہانے کرپشن کر رہے تھے، انہوں نے ہر جگہ جھوٹ بولا، لیکن وہ آج پوچھتے ہیں کہ ان کا قصور کیا ہے؟

ایک سوال کے جواب میں تحریک انصاف کے سربراہ کا کہنا تھا کہ اس بار نواز شریف جدہ نہیں اڈیالا جائیں گے، وہ استعفیٰ دیں یا نہ دیں، انہیں جانا ہوگا، اوران سب کے نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ (ای سی ایل) میں ڈالنے چاہئیے۔

ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ اس بار نواز شریف یا تو خود استعفیٰ دیں گے، یا انہیں نکالا جائے گا، اگر وہ عوام میں جائیں تو انہیں ’گو نواز گو‘ کا نعرہ سننے کو ملے گا۔

عمران خان نے پریس کانفرنس کے دوران یہ انکشاف بھی کیا کہ جس نے نواز شریف کو منی لانڈرنگ سکھائی اسے وزیر خزانہ بنادیا گیا،

عمران خان نے کہا کہ ملک کے تمام قانون دان اس بات پر متفق ہیں کہ نواز شریف کا وزیر اعظم کے عہدے پر رہنے کا جواز نہیں، اس لیے ملک کے تمام وکلاء نے بھی نواز شریف کے استعفے کا مطالبہ کیا، اب بھی وقت ہے، وہ چلے جائیں۔

پی ٹی آئی چیئرمین نے کہا کہ جے آئی ٹی رپورٹ کو عمران نامہ قرار دینے کا مطلب یہ ہوا ہم صحیح کہ رہے تھے۔

ان کے مطابق پاناما لیکس کیس کے معاملے میں وزیراعظم کو پانچویں بار صفائی پیش کرنے کا موقع ملا۔

عمران خان نے اپنی پریس کانفرنس میں ایک بار پھر الیکشن کمیشن (ای سی) کی تشکیل نو کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ کسی جماعت کو موجودہ الیکشن کمیشن پراعتماد نہیں،اور عام انتخابات میں تمام سیاسی جماعتوں نے دھاندلی کا الزام لگایا۔

ان کے مطابق 2013 کے الیکشن میں 22 جماعتوں نے کہا دھاندلی ہوئی۔

عمران خان نے تجویز دی کہ ایسی الیکشن کمیشن بنائی جائے جس پر سب کو اعتماد ہو، جب کہ اوورسیز پاکستانیوں کو ووٹ ڈالنے کا حق حاصل ہونا چاہیے۔

تحریک انصاف کے چیئرمین نے کیئر ٹیکر حکومت پر بھی تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ نگراں حکومت کے قیام میں تمام جماعتیں آن بورڈ ہونی چاہئیے۔