بریکنگ نیوز
Home / انٹرنیشنل / امریکہ کی جنوبی ایشیاء کیلئے نئی حکمت عملی

امریکہ کی جنوبی ایشیاء کیلئے نئی حکمت عملی

واشنگٹن۔ امریکہ کی جنوبی ایشیاء کیلئے نئی حکمت عملی پر پاکستانی حکام سے بات چیت کیلئے ایک امریکی وفد اگست کے پہلے ہفتے میں اسلام آباد کا دورہ کرے گا،چین پاکستان اقتصادی راہداری بارے پارلیمانی کمیٹی کے چیئرمین سینیٹر مشاہد حسین سید نے امریکہ کے پاکستان کی جانب سے افغانستان میں کاروائیوں کیلئے دہشتگردوں کو محفوظ پناہ گاہیں فراہم کرنے سے متعلق دعوے کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکہ افغانستان میں اپنی ناکامیوں کیلئے پاکستان کو قربانی کا بکرا بناناچاہتا ہے،بھارت سرد جنگ طرز کی محاذ آرائی سے گریز کرے۔

تفصیلات کے مطابق سینیٹر مشاہد حسین سید نے واشنگٹن تھنک ٹینک اٹلانٹک کونسل میں پاکستانی اور بھارتیوں کے ایک گروپ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایک امریکی وفد اگست کے پہلے ہفتے میں اسلام آباد کا دورہ کرے گا جو امریکہ کی جنوبی ایشیاء کیلئے نئی حکمت عملی پر پاکستانی حکام سے تبادلہ خیال کرے گا۔ امریکی وفد میں امریکی محکمہ خارجہ اور قومی سلامتی کونسل کے حکام شامل ہونگے۔جنوبی ایشیا سینٹر کونسل نے پاکستان اور بھارت کے دو سابق وزراء اطلاعات مشاہد حسین سید اور منیش تیواری کے درمیان میڈیا ڈپلومیسی پر بات چیت کیلئے گفتگو کا اہتمام کیا تھا۔

مشاہد حسین سید نے پورے خطے کیلئے ایک نئی پالیسی تیار کرنے کے ٹرمپ انتظامیہ کے فیصلے کی تعریف کی۔مشاہد حسین نے بھارت کو مشورہ دیا کہ وہ سرد جنگ طرز کی محاذ آرائی سے گریز کرے۔ انھوں نے امریکہ کے اس دعوے کو مسترد کردیا کہ پاکستان دہشتگردوں کو افغانستان میں حملے کرنے کیلئے محفوظ پناہ گاہیں فراہم کررہا ہے۔مشاہد حسین سید کاکہنا تھاکہ امریکہ افغانستان میں اپنی ناکامیوں کیلئیپاکستان کو قربانی کا بکرا بناناچاہتا ہے۔