بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / اے این فور میں جوڑ توڑ کا سلسلہ شروع

اے این فور میں جوڑ توڑ کا سلسلہ شروع

پشاور۔قومی اسمبلی کے حلقہ این اے فور میں ہونے والے ضمنی الیکشن کے لیے جوڑ توڑ کاسلسلہ شروع ہوگیاہے مسلم لیگ ن جے یو آئی کی حمایت حاصل کرنے کے لیے مولانا فضل الرحمان سے ایک بارپھر رابطہ کرے گی جبکہ جمعیت علمائے اسلام اپنے امیدوار کی کامیابی کے لیے آج قومی وطن پارٹی سے حمایت مانگے گی ذرائع کے مطابق مسلم لیگ ن کی صوبائی ومرکزی قیادت اسلام آبادمیں مولانا فضل الرحمان سے ملاقات کرکے ان سے اپنے حق میں پارٹی امیدوار دستبردار کرنے کی درخواست کرے گی۔

ن لیگ کے ذرائع کے مطابق چونکہ ہم دونوں اتحادی جماعتیں ہیں اور 2013ء کے الیکشن میں ہمارے امیدوارنے جے یو آئی کے امیدوار سے زیادہ ووٹ لیے تھے اس لیے اس نشست پر ہمار ا حق زیادہ ہے دوسر ی طرف جے یو آئی نے اپنے امیدوار کی حمایت کے لیے کیوڈبلیو پی کے ساتھ ابتدائی رابطہ کے بعدباضابطہ جرگہ بھجوانے کافیصلہ بھی کیاہے اس ضمن میں صوبائی امیر مولانا گل نصیب خان نے گذشتہ روز سکندرشیرپاؤ کے ساتھ فون پر با ت چیت کی جس کے بعدآج وفدوطن کور جاکرباضابطہ طور پر حمایت کی درخواست کرے گا ۔

دوسری جانب این اے چارپرہونے والے ضمنی الیکشن کے لیے امیدواروں کی طرف سے کاغذات نامزدگی جمع کرانے کاسلسلہ جاری ہے مسلم لیگ ن کے امیدوار نے گذشتہ روز کاغذات جمع کرادیئے جے یو آئی ، اے این پی آج اور پی ٹی آئی کل کاغذات جمع کرائے گی مسلم لیگ ن کے امیدوار ناصرخان موسیٰ زئی نے گذشتہ روز ایک بڑے جلوس کی شکل میں جاکر اپنے کاغذات نامزدگی جمع کرائے ۔

اس موقع پر ان کاکہناتھاکہ این اے فور پر پی ٹی آئی کو عبرتناک شکست دی جائے گی جے یو آئی کے امیدوار خالدوقار چمکنی اور اے این پی کے امیدوا ر خوشدل خان آج اپنے اپنے کاغذات جمع کرائیں گے جو اپنے اپنے حامیوں کے بڑے جلوسوں کی شکل میںآئیں گے پی ٹی آئی کے امیدوار ارباب عامرکی طرف سے کل کاغذات نامزدگی جمع کرانے کاامکان ہے جسکے بعدعوامی رابطہ مہم میں تیز ی لائی جائے گی ۔ پاکستان تحریک انصاف نے لاہور کے ضمنی الیکشن میں شکست کے بعد پشاو رمیں ہونے والے ضمنی انتخابات میں کامیابی کے حصول کوممکن بنانے کے لیے اعلیٰ سطح پر مشاورت کے بعدحکمت عملی وضع کرلی ہے مبصرین این اے فور کے الیکشن کوپی ٹی آئی کے لیے سیاسی زندگی و موت کامعاملہ قرادے رہے ہیں اسلام آبادمیں ہونے والے اجلاس کی صدارت عمرا ن خان نے کی جبکہ جہانگیر ترین ،پرویز خٹک اورشاہ فرمان سمیت اہم رہنماموجودتھے۔

اس موقع پر این اے فور کے انتخاب کو اگلے عام انتخاب کے تناظر میں انتہائی اہم قراردیتے ہوئے جامع حکمت عملی مرتب کی گئی اور اس امر پراتفاق کیاگیاکہ اس نشست پر پہلے سے زیادہ مارجن کے ساتھ کامیابی کے حصول کو ممکن بنانے کے لیے بھرپورانتخابی مہم چلائی جائے گی ذرائع کے مطابق رواں ہفت سے انتخابی مہم کاآغازکردیاجائے گا