بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / این اے فور کا انتخاب لڑنے والے امیدواروں کا بائیو ڈیٹا

این اے فور کا انتخاب لڑنے والے امیدواروں کا بائیو ڈیٹا

پشاور۔این اے فور میں ہونے والے ضمنی الیکشن کے لیے تمام بڑی جماعتوں نے اپنی انتخابی مہم تیز کردی ہے ن لیگ کی انتخابی مہم کی نگرانی ڈاکٹر عباداللہ ،پی ٹی آئی کی شاہ فرمان ،اے این پی کی میاں افتخارحسین ،پی پی پی کی سینیٹر سردارعلی اور جماعت اسلامی کی انتخابی مہم کی نگرانی مشتاق احمد خان کررہے ہیں ن لیگ کے انتخابی امیدوار ناصر خان موسیٰ زئی پارٹی کے صوبائی سیکرٹری اطلاعات اور ایک کامیاب صنعتکارہیں جبکہ وہ 2018کے انتخابات میں اسی حلقہ سے رنر اپ رہے ہیں۔

اے این پی کے امیدوار خوشدل خان پیشہ کے لحاظ سے وکیل ہیں جبکہ وہ گذشتہ دورحکومت میں صوبائی اسمبلی کے ڈپٹی اسپیکر بھی رہ چکے ہیں پی ٹی آئی کے امیدوار ارباب عامرکاتعلق پشاور کے دیرینہ سیاسی گھرانے ارباب خاندان سے ہے وہ پانچ سال تک ٹاؤ ن فور کے ناظم بھی رہ چکے ہیں پی پی پی کے امیدوار اسدگلزار اعلیٰ تعلیم یافتہ اور کامیاب کاروباری شخصیت ہیں جن کے والد مرحوم گلزا ر خان نے پچھلے الیکشن میں ریکارڈ ووٹ لے کر این اے فور پر کامیابی حاصل کی تھی ۔

جماعت اسلامی کے امیدوارواصل فاروق اے این پی کے دیرینہ کارکن رہے ہیں اورکچھ عرصہ پہلے ہی جماعت اسلامی میں شمولیت اختیار کی ہے وہ دومرتبہ یو سی چمکنی کے ناظم منتخب ہوچکے ہیں اس کے علاوہ حلقہ سے نئی دینی جماعت تحریک لبیک پاکستان کے امیدوار علامہ شفیق امینی کاتعلق چارسدہ کے معروف دینی خانوادے سے ہے ان کے دادا حاجی محمد امین باباجی حاجی صاحب ترنگزئی کے خلیفہ تھے تمام جماعتوں نے بھرپور انتخابی مہم شروع کررکھی ہے اور بڑے جلسو ں کے بجائے سارازور یو سی سطح پر ہونے والے جلسوں اور کارنرمیٹنگز پر لگایاجارہاہے۔

اکتوبر کے دوسرے عشرے میں تمام جماعتوں کی صوبائی و مرکزی قیادت کی طرف سے بڑے جلسوں کے لیے حکمت عملی تیار کی جاچکی ہے 1988سے لے کر 2008ء کی اسمبلیوں تک اس حلقہ میں کبھی ضمنی الیکشن نہیں ہوا پہلی بار ہونے والے ضمنی الیکشن کی وجہ سے حلقہ کے لوگوں کاجوش وخروش بڑھتا جارہاہے ۔ دوسری جانب پاکستان تحریک انصاف نے نوجوانوں کو مزید متحرک کرنے کے لیے اراکین اسمبلی اور پارٹی رہنماؤں کی ڈیوٹیاں لگاتے ہوئے ہرایک کو اہداف حوالہ کردیئے ہیں۔

پارٹی ذرائع کے مطابق مرکزی چیئر مین عمران خان کی ہدایت پرپارٹی امیدواراربا ب عامر کی انتخابی مہم کومزید تیز کرنے کی غرض سے نوجوانوں کو متحرک کرنے کافیصلہ کیا گیا ہے اس مقصد کیلئے پارٹی کے اراکین اسمبلی اور صوبائی رہنماؤں کی ڈیوٹیاں لگادی گئی ہیں جبکہ ان کو اہداف بھی حوالہ کردیئے گئے ہیں پارٹی ذرائع کاکہناہے کہ اکتوبر میں مرکزی قیادت کے جلسوں کے لیے بھی شیڈول بنایاجارہاہے پارٹی رہنماؤں کے مطابق اس بار پہلے سے زیادہ اکثریت سے کامیابی حاصل کرینگے