بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / وفاقی وزراء کے عدلیہ مخالف بیانات پر وزیراعظم ان ایکشن

وفاقی وزراء کے عدلیہ مخالف بیانات پر وزیراعظم ان ایکشن

اسلام آباد۔ وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے وفاقی وزراء اور ممبران اسمبلی کو عدلیہ اور قومی اداروں کے خلاف متنازعہ بیانات سے روک دیا۔ نیب میں سابق وزیراعظم نواز شریف، کیپٹن ریٹائرڈ صفدر مریم نواز کے علاوہ حسن اور حسین نواز کی نیب میں پیشی کے معاملے پر ہنگامہ خیز اجلاس میں کیپٹن (ر)صفدر کی گرفتاری پر مسلم لیگ (ن) کے ممبران مشتعل ہو گئے۔ پیر کے روز پارلیمنٹ ہاؤس کے اجلاس میں وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی صدارت میں اعلیٰ سطحی اجلاس ہوا جس میں وفاقی وزراء ، وزرائے مملکت اور پارلیمانی سیکرٹری کے علاوہ مسلم لیگ ن کے ممبران اسمبلی نے شرکت کی۔

سابق وزیر داخلہ چوہدری نثار کی اجلاس میں عدم شرکت پر وزراء اور ممبران اسمبلی دیر تک تبصرے کرتے رہے۔ وزیراعظم نے سختی سے ہدایت کی کہ پاکستان کو اندرونی اور بیرونی لحاظ سے سخت چیلنجز کا سامنا ہے لہذا قومی سلامتی سے متعلق حساس اداروں اور سپریم کورٹ کے حوالے سے متنازعہ بیانات سے گریز کیا جائے۔ متعدد وزراء اور ممبران اسمبلی نے کیپٹن (ر) صفدر کی گرفتاری کے بعد سخت احتجاج کیا اور واضح کیا کہ مستقبل میں اگر ایسا کوئی ناگزیر واقع ہوا تو اس پر سخت ردعمل سامنے آئے گا۔

وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ تمام شخصیات کو نیب سمیت اداروں میں پیشی پر شرکت کرنی چاہیئے اور معاملات کو الجھانے اور اسے متنازعہ بنانے سے گریز کیا جائے۔ اجلاس سے قبل وزیراعظم شاہد خاقان عباسی جب پارلیمنٹ میں آئے تو پارلیمنٹ کے داخلی اور خارجی راستوں پر رینجرز کے علاوہ پولیس اور سول کپڑوں میں ملبوس پولیس اہلکاروں کی بڑی تعداد نے پارلیمنٹ کو گھیرے میں لے لیا ۔

کسی بھی ناخوشگوار واقعے سے نمٹنے کے لئے پولیس کی اضافی نفری کو طلب کیا گیا۔ وزیراعظم نے تمام ممبران اسمبلی اور وزراء کو ہدایت کی کہ وہ متنازعہ بیانات سے گریز کریں ۔ بصورت دیگر پارٹی ڈسپلن کی خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف سخت ایکشن لیا جا سکتا ہے۔ وزیراعظم نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم نواز شریف مریم نواز اور حسن اور حسین نواز کے علاوہ کیپٹن صفدر بھی عدالت میں پیش ہوں گے۔

انہوں نے کہا کہ قومی سلامتی کے تقاضوں کے پیش نظر تصادم سے گریز کریں ۔ ڈیڈھ گھنٹے سے زائد جاری رہنے والے اجلاس میں لائن آف کنٹرو ل پر بھارت کی جانب س شدید خلاف ورزی سمیت بیرون ملک کے دوروں کے حوالے سے شاہد خاقان عباسی نے پارلیمنٹیرین کو اعتماد میں لیا۔