بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / شرجیل میمن کو نیب حکام نے گرفتار کرلیا

شرجیل میمن کو نیب حکام نے گرفتار کرلیا


کراچی: سندھ کے محکمہ اطلاعات میں 5 ارب 76 کروڑ روپے مبینہ بدعنوانی کے معاملے پر سندھ ہائی کورٹ نے سابق صوبائی وزیر اطلاعات اور پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے رہنما شرجیل انعام میمن سمیت ملزمان کی درخواست ضمانت مسترد کردی، جس کے بعد نیب کی ٹیم نے سابق صوبائی وزیر کو عدالت سے باہر آتے ہی گرفتار کرلیا۔

سندھ ہائی کورٹ کے چیف جسٹس احمد علی ایم شیخ کی سربراہی میں 2 رکنی بینچ نے پی پی پی کے رہنما سمیت 13 ملزمان کی ضمانت کی درخواست مسترد کردی تھی۔

شرجیل میمن اور دیگر ملزمان ضمانت مسترد ہوجانے کے بعد کمرہ عدالت میں موجود رہے، جہاں ان کی گرفتاری کے لیے نیب کی اضافی نفری طلب کی گئی جبکہ رینجرز سمیت قانون نافذ کرنے والے دیگر اداروں کے اہلکاروں کی نفری کو بھی تعینات کیا گیا تھا، تاکہ ملزمان کی گرفتاری کو یقینی بنایا جاسکے۔

واضح رہے کہ عدالت کے احاطے سے کسی ملزم کو گرفتار نہیں کیا جاسکتا، اس لیے نیب کی ٹیم شرجیل انعام میمن کی گرفتاری کے لیے عدالت کے باہر موجود رہی۔شرجیل انعام میمن کی گرفتاری کے دوران شدید بدنظمی ہوئی جبکہ اس دوران وکلا کی کثیر تعداد بھی جمع ہو گئی تھی تاہم انہیں حراست میں لے کر نیب کے دفتر منتقل کردیا گیا۔نیب حکام شرجیل میمن کو احتساب عدالت میں پیش کریں گے جہاں پر مزید سماعت ہوگی۔

قبل ازیں شرجیل انعام میمن نے گرفتاری سے بچنے کے لیے چیف جسٹس سندھ ہائی کورٹ کو درخواست دی تھی، جس پر چیف جسٹس کی سربراہی میں 2 رکنی بینچ نے سماعت کی اور شرجیل انعام میمن کی درخواست کو مسترد کردیا۔

بعد ازاں سابق صوبائی وزیر اطلاعات شرجیل انعام میمن کے ساتھی دیگر ملزمان نے خود کو نیب حکام کے حوالے کیا۔ اس سے قبل سندھ ہائی کورٹ نے ایک ملزم کی درخواست ضمانت منظور کی تھی۔

نیب کے مطابق ملزمان پر سندھ فیسٹول اور دیگر تشہیری مہم میں کرپشن کا الزام ہے، جیسا کہ سندھ فیسٹول میں پہلے اشتہارات دیئے گئے جبکہ کمپنیوں کی تفصیلات بعد میں جاری کی گئی اور اشتہار چھپنے سے پہلے رقم کی ادائیگی کے ریلیز آرڈر جاری کیے گئے۔