بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / خواجہ سراؤں کی شادیوں میں شرکت پولیس اجازت سے مشروط 

خواجہ سراؤں کی شادیوں میں شرکت پولیس اجازت سے مشروط 


پشاور۔ناظم ٹاؤن 2فرید اللہ خان کافور ڈھیری اور پولیس افسران نے خواجہ سراء کے قتل کا نوٹس لیتے ہوئے ٹاؤن ٹو کی حدود میں شادی بیاہ میں خواجہ سراؤں کی شرکت کو پولیس کی اجازت سے مشروط کر دیا ہے جبکہ علاقے میں ہوائی فائرنگ اور سود کے کاروبار سے منسلک افراد کو بھاری جرمانے عائد کرنے اور گرفتاریوں کا بھی فیصلہ کر لیا گیا ہے اس ضمن میں ٹاؤن کونسل ٹو میں قرار داد منظور کرائی جائے گی ناظم ٹاؤن ٹو(زرعی ٹاؤن ) کی سربراہی میں پولیس افسران اور منتخب بلدیاتی نمائندوں کا اجلاس منعقد ہوا جس میں ڈی ایس پی گران اللہ ٗ ایس ایچ او متھرا ٗ ڈسٹرکٹ ممبران رضا اللہ خان ٗ شمس الباری ٗ جمشید ملازئی اور دیگر بھی موجود تھے اس موقع پر ناظم ٹاؤن ٹو فرید اللہ خان کافورڈھیری نے پولیس سے مشاورت کے بعد ٹاؤن ٹو کی حدود میں شادی بیاہ اور خوشی کی تقاریب میں خواجہ سراؤں کو بلانے سے قبل متعلقہ تھانے سے اجازت نامہ حاصل کیاجائیگا جبکہ خلاف ورزی کے مرتکب افراد کو نہ صرف گرفتارکیا جائیگا بلکہ خواجہ سراؤں کو پہنچنے والے نقصانات کی ذمہ داری بھی متعلقہ افراد پر عائد ہوگی علاقے میں ہوائی فائرنگ کے واقعات کی روک تھام کیلئے اس عمل کے مرتکب افراد کو گرفتار کیا جائیگا اورمنتخب نمائندے ان افراد کی رہائی کی سفارش نہیں کرینگے ٹاؤن ٹو میں سود کے کاروبار کے تدارک کیلئے بھی جرمانوں اور گرفتاریوں کا فیصلہ کیا گیا ہے ناظم ٹاؤن ٹو فرید اللہ خان کافور ڈھیری کا کہنا ہے کہ خواجہ سرا بھی انسان ہیں ان کے ساتھ غیر انسانی سلوک کسی صورت برداشت نہیں کرینگے جس نے بھی قانون کی خلاف ورزی کی اس کے خلاف پولیس ضرور ایکشن لے انہوں نے کہا کہ مذکورہ اقدامات کیلئے ٹاؤن کونسل ٹو میں قرار دادیں بھی پیش کی جائیں گی اور ان کی بھاری اکثریت سے منظوری حاصل کی جائے گی ۔