بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / خیبر پختونخوا حکومت کا 7اعلیٰ افسروں کیخلاف تحقیقات کا حکم

خیبر پختونخوا حکومت کا 7اعلیٰ افسروں کیخلاف تحقیقات کا حکم


پشاور۔خیبر پختونخواحکومت نے محکمہ قانون میں گریڈ18سے19تک کے 7اعلیٰ افسران کے خلاف30دن کے اندر محکمانہ تحقیقات مکمل کر کے رپورٹ فراہم کرنے کی ہدایت کی ہے اس بات کا فیصلہ چیف سیکرٹری خیبر پختونخوا کی صدارت میں ہونے والے اعلیٰ سطحی اجلاس کے دوران کیا گیا ہے ۔

اجلاس میں محکمہ قانون سمیت دیگر متعلقہ محکموں کے سربراہوں نے شرکت کی اجلاس میں محکمہ قانون کے حکام نے چیف سیکرٹری کو بتایا کہ محکمے سات اعلیٰ افسران جن میں گریڈ اٹھارہ کے ڈپٹی سولیٹر ایم اقبال اے ایل ڈی ٹو ہمیدہ بیگم، گریڈ19کے ڈپٹی اٹارنی لیبر کورٹ پشاور، ڈسٹرکٹ اٹارنی پشاور وسیم جمیل، ڈسٹرکٹ اٹارنی مصطفی کمال، ڈسٹرکٹ اٹارنی جمیشدآفریدی اور سابق ڈی ایس اسمبلی اکبر علی کے خلاف انضباطی کاروائی کا عمل جاری ہے تاہم چیف سیکرٹری نے محکمہ قانون کے حکام کی یقین دہانی پر عدم اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے صوبائی انسپکشن ٹیم کو 30دن کے اند ر تحقیقات مکمل کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے واضح کیا کہ اس حوالے سے ناکامی کی صورت میں متعلقہ حکام کے خلاف کاروائی کی جائے گی۔

چیف سیکرٹری نے محکمہ قانون کو مزید ہدایت کی کہ محکمہ میں جاری تمام انکوائریوں کا کیس ٹو کیس جائزہ لے کر اسے جلد مکمل کرنے کی کوشش کریں اور انکوائری افسران او ر جن کے خلاف انکوائری ہو رہی کے نام اور انکوائری شروع کرنے کی تاریخ کو واضح کیا جائے۔