بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / وزیراعظم نے چشمہ تھری نیوکلیئر پاور پلانٹ کا افتتاح کردیا

وزیراعظم نے چشمہ تھری نیوکلیئر پاور پلانٹ کا افتتاح کردیا


میانوالی۔وزیر اعظم نواز شریف نے چشمہ تھری نیو کلیئر پاور پلانٹ کا افتتاح کر دیا، اس جوہری پلانٹ سے 340میگاواٹ بجلی قومی گرڈ میں شامل ہو گی۔اٹامک انرجی کمیشن اور چائنہ نیشنل نیو کلیئر کارپوریشن نے مشترکہ طور پر یہ منصوبہ پایا تکمیل تک پہنچانا ہے۔2030 تک جوہری توانائی سے بجلی کی پیداوار کو 8800 میگاواٹ تک لیجایا جائے گا۔منصوبے کی تکمیل سے صنعتی اور کمرشل شعبے کو بجلی کی فراہمی ممکن ہوگی، منصوبہ توانائی کی قلت پر قابو پانے کی حکومتی کوشش کا حصہ ہے۔منصوبے کی افتتاح تقریب میں وفاقی وزیر پانی و بجلی خواجہ آصف، وزیر اعظم کے مشیر امور خارجہ سرتاج عزیز بھی موجود تھے۔واضح رہے کہ چشمہ-تھری کے افتتاح سے قبل چشمہ ون اور چشمہ ٹو سلے پہلے ہی بجلی کی پیداوار ہو رہی ہے۔

قومی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق اس منصوبے کے علاوہ چشمہ فور بھی 2017 میں مکمل ہو جائے گا۔علاوہ ازیں کراچی میں بھی جوہری پلانٹ سے بجلی کی پیداوار کے منصوبوں پر کام جاری ہے، کراچی نیوکلیئر پارو پروجیکٹس کے ٹو اور کے تھری کی تکمیل 2030 میں ہوگی، ان تمام منصوبوں سے مجموعی طور پر 8800 میگا واٹ بجلی سسٹم کا حصہ بنے گی۔پاکستان کے تمام جوہری بجلی گھروں میں پاکستان نیوکلیئر ریگولیٹر اتھارٹی کے طے کردہ حفاظتی اصولوں اور دیگر معاملات کا خیال رکھا جاتا ہے، یہ تمام اصول انٹرنیشنل اٹاملک انرجی ایجنسی کے طریقہ کار کے مطابق ہے۔چشمہ نیوکلیئر پاور کمپلیکس میں چشمہ تھری اور چشمہ فور ری ایکٹرز کے معاہدے پر 2009 میں چینی کمپنی کے ساتھ دستخط کیے گئے تھے جبکہ انہوں نے یہ بالترتیب 2016 اور 2017 تک کام کرنا شروع کرنا طے پایا تھا۔

340 میگا واٹ کے حامل چشمہ تھری اور چشمہ-فور پانی کے دبا سے چلنے والے ری ایکٹرز ہیں، 300 میگا واٹ کے حامل چشمہ 1 اور 2 بھی چین نے فراہم کیے تھے۔پاکستان اٹامک انرجی کمیشن کے حکام کے مطابق حکومت نے 2050 تک 40 ہزار میگا واٹ بجلی پیدا کرنے کا منصوبہ بنایا ہے۔یاد رہے کہ پاکستان نے 1972 میں ہی جوہری توانائی سے بجلی کی پیداوار شروع کر دی تھی، جبکہ کراچی میں 125 میگاواٹ بجلی کی پیداوار کا پلانٹ کینپ-ون اسی زمانے میں قائم کیا گیا تھا، تاہم ابھی اس پلانٹ کی استعداد کار اسی طرح برقرار نہیں ہے، اور اس سے 100 میگاواٹ سے کم بجلی پیدا ہو رہی ہے۔