بریکنگ نیوز
Home / پاکستان / مسلم ممالک کے ساتھ قریبی تعاون جاری رکھے گے ،سردار ایاز صادق

مسلم ممالک کے ساتھ قریبی تعاون جاری رکھے گے ،سردار ایاز صادق

اسلام آباد۔ سپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق سے بحرین کے نیشنل گارڈز کے کمانڈر، آزاد جموں و کشمیر اسمبلی کی ممبر اور بیلا روس کے سفیر نے پارلیمنٹ ہاؤس میں علیحدہ علیحدہ ملاقاتیں کیں۔ملاقاتوں میں باہمی دلچسپی کے امور اور اہم علاقائی و عالمی معاملات پر تبادلہ خیال کیا گیا۔بحرین کے نیشنل گارڈزکے کمانڈر لیفٹیننٹ جنرل شیخ محمد بن عیسیٰ بن سلمان ا لخلیفہ سے گفتگو کرتے ہوئے سپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق نے کہا کہ مسلم ممالک کے مابین قریبی تعاون دہشت گردی اور آپس کے اختلافات کی وجہ سے درپیش چیلنجوں کا مقابلہ کرنے کے لیے ناگزیر ہے۔

انھوں نے کہا کہ پاکستان مسلم دنیا میں امن اور قریبی تعاون کو فروغ دینے کے لیے بحرین کے ساتھ مضبوط شراکت داری کے لیے پر عزم ہے۔ انھوں نے انتہاپسند عناصر اور مغربی ذرائع ابلاغ کی طرف سے اسلام کو تشدد اور عدم برداشت کا مذہب پیش کرنے کی مذمت کرتے ہوئے اسلام کے صحیح تشخص کو اجاگر کرنے کے لیے اجتماعی کوششوں کی ضرورت پر زور دیا۔ انھوں نے کہا کہ اسلام امن و برداشت کا مذہب ہے اور دہشت گردی اور انتہا پسندی کی سختی سے ممانعت کرتا ہے۔ انھوں نے کشمیر اور فلسطین میں ایک جیسی جارحیت اور مظالم کی مذمت کرتے ہوئے اس عزم کا اعادہ کیا کہ پاکستان دونوں اقوام کی سفارتی اور اخلاقی مدد جاری رکھے گا۔ لیفٹیننٹ جنرل شیخ محمد بن عیسیٰ بن سیلمان الخلیفہ نے مشترکہ چیلنجوں کا مقابلہ کرنے کے لیے دونوں برادر اسلامی ممالک کے درمیان قریبی تعاون کو فروغ دینے کی سپیکر قومی اسمبلی کی پیش کردہ تجویز سے اتفاق کیا۔ انھوں نے کہا کہ مسلم دنیا کو پاکستان کی قیادت پر بھرپور اعتماد ہے اور اس امید کا اظہار کیا کہ پاکستان دہشت گردی کے ناسور کے خاتمے کے لیے خطے کے ممالک کے ساتھ قریبی تعاون جاری رکھے گا انھوں نے سپیکر کو خطے کی ترقی کے لیے بحرین کے پاکستان کے ساتھ شانہ بشانہ کھڑا رہنے کی یقین دہانی کرائی۔

بیلا روس کے سفیرMr. Andrei Ermolovich سے گفتگو کرتے ہوئے سپیکر ایاز صادق کا کہنا تھا کہ پاکستان بیلا روس کے ساتھ اپنے دوستانہ تعلقات کو بڑی اہمیت دیتا ہے اور سماجی و معاشی شعبوں میں تعاون کو فروغ دے کر دو طرفہ تعلقات کو مذید وسعت دینے کی خواہش رکھتا ہے۔ انھوں نے کہا کہ پاکستان کی سیاسی قیادت خطے کے ممالک کے مابین قریبی تعاون کو بڑھانے کے لیے پرعزم ہے۔ انھوں نے دونوں ممالک کے مابین توانائی ، ٹیکنالوجی اور دیگر اقتصادی شعبوں میں تعاون کو بڑھانے کی ضرورت پر زور دیا۔ انھوں نے کہا کہ دو طرفہ تعلقات کو مزید مستحکم بنانے کے لیے پارلیمانی سفارت کاری اہم کردار ادا کر سکتی ہے۔

بیلاروس کے سفیر نے علاقائی مسائل سے نمٹنے کے لئے سپیکر کی باہمی اشتراک کی تجویز پر اتفاق کیا۔ انھوں نے عوامی رابطوں میں اضافے کے ذریعے باہمی تعلقات کو وسعت دینے کی ضرورت پر زور دیا۔بعد ازاںآزاد جموں کشمیر قانون ساز اسمبلی کی ممبر محترمہ سحرش قمر سے مسئلہ کشمیر پر گفتگو کرتے ہوئے سردار ایاز صادق نے کہا کہ کشمیری عوام کی ا منگوں کے مطابق مسئلہ کشمیر کا پرا من حل خطے کی ترقی اور امن کے لیے ضروری ہے۔

انھوں نے کہا کہ پاکستان اقوام متحدہ کے چارٹر اور قراردادوں کے مطابق کشمیری عوام کی حق خودارادیت کے لیے تحریک کی سیاسی،سفارتی اور اخلاقی حمایت جاری رکھے گا۔محترمہ سحرش قمر نے علاقائی اور عالمی فورمز پر مسئلہ کشمیر کو پر زور انداز میں اٹھانے پر پاکستان کی پارلیمنٹ کے کردار کو سراہا۔انھوں نے کہا کہ پارلیمانی سفارت کاری مسئلہ کشمیر کو اجاگر کرنے میں کلیدی اہمیت کی حامل ہے۔ انھوں نے عالمی فورمز پر مسئلہ کشمیر کو اجاگر کرنے میں سپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق کی کاوشوں کو بھی سراہا۔