بریکنگ نیوز
Home / انٹرنیشنل / کشمیری علیحدگی پسند لیڈر دہشتگرد نہیں ، بھارتی سپریم کورٹ

کشمیری علیحدگی پسند لیڈر دہشتگرد نہیں ، بھارتی سپریم کورٹ


نئی دہلی ۔ قومی سلامتی سے جڑے معاملات کو مرکزی حکومت کا استحقاق قرار دیتے ہوئے بھارتی سپریم کورٹ نے کہا ہے کہ کشمیری علیحدگی پسند لیڈر دہشت گرد نہیں ہیں مفاد عامہ کے تحت دائر ایک درخواست کو یکسر خارج کرتے ہوئے عدالت عظمیٰ کے دو رکنی بنچ نے واضح کیا کہ جرم ثابت ہونے تک کسی فرد یا جماعت پر دہشت گردی کا لیبل چسپاں نہیں کیا جاسکتا سپریم کورٹ آف انڈیا نے مفاد عامہ کے تحت دائر اس درخواست کو یکسر خارج کر دیا جس میں عدالت عظمیٰ سے اس بات کے لئے رجوع کیا گیا تھا کہ مرکزی اور ریاستی حکومت کی طرف سے کشمیری علیحدگی پسند راہنماؤں کو فراہم کی جانے والی مختلف سہولیات اور دی جانے والی مراعات پر پابندی لگائی جائے۔

منوہر لعل شرما کی جانب سے مفاد عامہ کے تحت دائر کی جانے والی درخواست کو زیر سماعت لاتے ہوئے سپریم کورٹ کے جسٹس یویوللت پر مشتمل دو رکنی بنچ نے اس درخواست کو یہ کہہ کر زیر سماعت لانے کو مسترد کر دیا کہ قومی سلامتی سے جڑے معاملات کے بارے میں کوئی بھی فیصلہ لینے کا اختیار مرکزی حکومت اور فوج کو حاصل ہے سپریم کورٹ نے علیحدگی پسند رہنماؤں کو بطور دہشتگرد پیش کئے جانے پر سخت اعتراض کرتے ہوئے واضح کیا کہ جب تک کسی گرفتار شخص یا ملزم کے خلاف دہشتگردی سے جڑا کوئی جرم ثابت نہیں ہوتا تب تک اس پر دہشتگردی کا لیبل چسپاں نہیں کیا جا سکتا ۔