108

علی ظفرکی میشا شفیع کے خلاف مقدمے کا فیصلہ جلد کرنے کی درخواست

لاہور: گلوکارعلی ظفر نے گلوکارہ میشاشفیع کے خلاف دائر کردہ مقدے کا جلد از جلد فیصلہ سنانے کی درخواست دائر کردی، میشا شفیع نے علی ظفر پر ہراساں کرنے کا الزام لگایا تھا ۔

تفصیلات کے مطابق یہ در خواست علی ظفر کے وکیل رانا انتظار کی جانب سے سیشن کورٹ میں دائرکی گئی ہے۔ علی ظفر نے گلوکارہ میشا شفیع کے خلاف جھوٹے الزامات لگانے کا دعویٰ کررکھا ہے۔

درخواست میں کہا گیا ہے کہ یہ کیس ایک سال سے زیرالتوا ہے، میشا شفیع مختلف طریقوں سے کیس کوالتوا کا شکار کررہی ہیں، عدالت ایک ماہ کے اندراس کے فیصلہ سنائے۔

عدالت نے درخواست کی سنوائی کرتے ہوئے میشا شفیع کو 19 مارچ کو عدالت میں پیش ہونے کے لیے نوٹس جاری کردیا ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ برس اپریل میں گلوکارہ میشا شفیع نے علی ظفر پرجنسی ہراسانی کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا تھا کہ علی ظفر نے انہیں ایک زائد بار جنسی طورپرہراساں کیا ہے۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر میشا شفیع نے لکھا تھا کہ ‘میں اپنے ساتھ جنسی ہراساں کرنے کے واقعے پر اس لیے خاموشی توڑ رہی ہوں، کیونکہ مجھے لگتا ہے اس اقدام کے ذریعے اُس روایت کو ختم کرسکتی ہوں جو ہمارے معاشرے کا حصہ ہے‘۔

الزامات کا جواب دیتے ہوئے نامور پاکستانی گلوکار علی ظفر نے ساتھی گلوکارہ کے الزامات پر ردعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ میں سوشل میڈیا پر الزام تراشی کے بجائے میں میشا کو عدالت لے کر جاؤں گا۔

یاد رہے کہ علی ظفر نے میشا شفیع کے خلاف سو کروڑ ہرجانے کا دعوٰی دائر کر رکھا ہے، جس میں اُن کا کہنا تھا کہ مجھ پر ہراسگی کا جھوٹا اور بے بنیاد الزام لگایا گیا ہے‘۔

اپنے ٹویٹر پیغام میں میشا شفیع نے یہ بھی کہا تھا کہ میری جانب سے علی ظفر پرالزام لگانے کے بعد سے آدھے درجن خواتین سامنے آئیں ہیں اور ان تمام خواتین نے بھی علی ظفر پر یہی الزام عائد کیا ہے، تاہم کسی بھی خاتون نے میشا شفیع کے اس دعوے کی تصدیق نہیں کی۔