409

بلال ٹاؤن دھماکے کی ابتدائی تحقیقاتی رپورٹ تیار

پشاور۔ جی ٹی روڈ بلال ٹاؤن میں واقع ہوٹل میں خوفناک دھماکے کی ابتدائی تحقیقاتی رپورٹ تیار کرلی گئی جس میں انکشاف ہواہے کہ عرصہ دراز سے ہوٹل کے گیس پائپ لیکج تھے کئی بار بینک انتظامیہ نے ہوٹل مالکان سے شکایت بھی کی تھی تحقیقات میںیہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ مین سوئی گیس لائن کا وال بھی فری تھا جس کمرے میں دھماکہ ہوا ہے کہ اس میں ایک سے ڈیڑھ کلوگرام والا گیس سلنڈر بھی پڑا تھا ۔

پولیس نے ہوٹل مالکان کیخلاف کاروائی کرنے کا بھی قوی امکان ظاہر کیا ہے پولیس کے مطابق جمعرات اور جمعہ کی درمیانی تھانہ گلبہار کے عین سامنے واقع ہوٹل افندی کی چوتھی منزل پر دھماکہ ہوا تھا جس میں ایک ہی خاندان کے 6افراد جاں بحق ہوئے تھے پولیس کے مطابق واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے حکام کی ہدایت پر تحقیقاتی کمیٹی قائم کی گئی جس کی ابتدائی میں انکشاف ہواکہ عرصہ دراز سے ہوٹل کے گیس پائپ لیکج تھے کئی بار ہوٹل کے گراؤنڈ فلور پر واقع سرکاری بینک کی انتظامیہ نے ہوٹل مالکان کو گیس سے متعلق شکایت بھی کی تھی جبکہ تحقیقات میں گیس کا مین وال بھی فری قرار پایا گیا ہے ۔

پولیس کے مطابق ہوٹل کے کمرے کی چیکنگ کی گئی تو وہاں سے ایک گلو گرام سے ڈیڑھ کلو تک کے گیس سلنڈر بھی موجود پایا گیا پولیس کے مطابق بم ڈسپوزل یونٹ نے بھی اپنی رپورٹ میں گیس دھماکے کی نشاندہی کی ہے کیونکہ جائے وقوعہ سے کوئی بارودی چیز کے نمونے نہیں ملے پولیس کے مطابق دفعہ 174 کے تحت مزید تحقیقات کی جارہی ہے اگر متاثرہ خاندان کی طرف سے کاروائی کیلئے درخواست دی گئی تو ہوٹل انتظامیہ کوغفلت کا مرتکب قرار دیکر ایف آئی آر درج کی جاسکتی ہے ۔