378

غیر جانبدار انتخابات کا انعقاد ترجیحات ہیں ٗ دوست محمد

پشاور۔نگران وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا جسٹس(ر) دوست محمد نے کہا ہے کہ ملک و قوم کی دائمی ترقی کی راہیں فاٹا کی ترقی سے نکلتی ہیں فاٹا اصلاحات کا آغاز ریلیف سے ہونا چاہئے اور یہی ہماری اولین ترجیح ہے نگران حکومت کا کوئی ذاتی ایجنڈا نہیں غیر جانبدار اور اطمینان بخش انتخابات کا انعقاد اور عوامی مفادات کا تحفظ ہماری ترجیحات میں شامل ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے امیر جماعت اسلامی سنیٹر سراج الحق سے گفتگوکرتے ہوئے کیا جنہوں نے وزیراعلیٰ سیکرٹریٹ پشاور میں ان سے ملاقات کی ملاقات میں قومی اہمیت کے حامل امور اور باہمی دلچسپی کے معاملات پر تبادلہ خیال کیا گیا ۔

نگران وزیراعلیٰ نے کہا کہ صاف ستھرے انتخابات کا انعقاد ان کا بنیادی مینڈیٹ اور مقصد ہے تاکہ کوئی بھی شخص یہ دعویٰ نہ کر سکے کہ اس سے ناانصافی ہوئی انہوں نے نگران کابینہ کے حوالے سے بات کرتے ہوئے کہا کہ انہیں کابینہ کیلئے پاکباز، ایماندار اور غیر سیاسی شخصیات کی تلاش ہے فاٹا کے حوالے سے بات کرتے ہوئے دوست محمد نے کہا کہ فاٹا اصلاحات پر بلا تاخیر اور تیزرفتاری سے عمل درآمد کی ضرورت ہے اور اس عمل درآمد کا آغاز فاٹا کے عوام کو فوری ریلیف سے کرنا چاہئے یہ ان کا حق ہے کیونکہ وہاں کے عوام نے بڑی مشکلات دیکھی ہیں وہ مزید مصائب کے متحمل نہیں ہو سکتے نگران وزیراعلیٰ نے قبائلی مشران سے ملاقاتوں کی تجویز سے اتفاق کیا اور کہا کہ ہم ایک ہیں۔

اور ہمیں باہمی کاوشوں سے فاٹا کے مسائل کا حل نکالنا اور اسے ترقی کی راہ پر گامزن کرنا ہے ادھر نگران وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا جسٹس(ر) دوست محمد نے کہا ہے کہ اسلامی ریاست کی پہچان یہ ہے کہ اس میں اقلیتوں کو مکمل مذہبی آزادی حاصل ہو اور پاکستان کا آئین بھی تمام شہریوں کے حقوق کے تحفظ کا ضامن ہے انہوں نے سکھ رہنما چن جیت کے قاتلوں کو کیفرکردار تک پہنچانے کیلئے موثر تحقیقات کی ہدایت کی اور مقتول کے لواحقین کو شہداء پیکیج کے تحت معاوضہ کی ادائیگی کا یقین دلایا وہ سکھ برادری کے نمائندہ وفد سے گفتگو کر رہے تھے جس نے وزیراعلیٰ سیکرٹریٹ پشاور میں ان سے ملاقات کی وفد نے نگران وزیراعلیٰ کو اپنے مسائل اور مطالبات سے آگاہ کیا نگران وزیراعلیٰ نے سکھ برادری کو درپیش مسائل حل کرنے کی یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ یہ ریاست کی ذمہ داری ہے کہ وہ اپنے تمام شہریوں کو تحفظ دے انہوں نے سکھ براردی کے لئے شمشان گھاٹ، گردوارہ میں ڈسپنسری، سکول اور دیگر مسائل فوری طور پر حل کرنے کیلئے متعلقہ حکام کو بلاتاخیر اقدامات کی ہدایت کی دریں اثناء نگران وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا جسٹس(ر) دوست محمد نے کہا ہے کہ تاجر برادری کا معاشرتی فلاح و ترقی میں اہم کردار ہے موجودہ نگران حکومت تاجر برادری کو درپیش مسائل حل کرنے اور انہیں قانون کے مطابق فوری ریلیف دینے کیلئے ہر ممکن اقدامات کریگی ۔

تاہم تاجر برادری سے بھی توقع ہے کہ وہ غریب عوام کی مشکلات کم کرنے کیلئے بطور مومن تعاون کریگی ان خیالات کا اظہار انہوں نے زاہد شنواری کی قیادت میں سرحد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹریز کے نمائندہ وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا جس نے وزیراعلیٰ سیکرٹریٹ پشاو ر میں ان سے ملاقات کی کوہاٹ ، مردان، چارسدہ اور صوابی سے چیمبرز کے صدور بھی وفد میں شامل تھے وفد نے نگران وزیراعلیٰ کو درپیش مسائل سے آگاہ کیا اور صوبائی صنعتی پالیسی پر عمل درآمد سمیت دیگر مطالبات وزیراعلیٰ کے سامنے رکھے وزیراعلیٰ نے ناروا لوڈشیڈنگ کے خاتمے، سوئی گیس کی فراہمی، صنعتی پالیسی پر عمل درآمد، کوہاٹ صنعتی زون کے قیام، پراپرٹی ٹیکس میں اضافے کے مسئلے سمیت دیگر تمام مسائل پر تفصیلی بریفنگ لینے کا عندیہ دیتے ہوئے تاجر برادری کو قانون کے مطابق فوری ریلیف دینے کا یقین دلایا ہے ۔نگران وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا جسٹس(ر) دوست محمد نے کہا ہے کہ سرکاری مشینری کی فاٹا تک توسیع ، فاٹا میں شفاف حکمرانی کی بنیاد ڈالنا، قوامین اور رولز ریگولیشنز ،فاٹا کو ترقی کے دھارے میں لانے کیلئے یکساں پالیسی پر عملدرآمد اور بلا رکاوٹ ترقی کے پہیہ کا رخ پورے قبائل کی طرف کرنا ایسے چیلنجز ہیں۔

جو کل وقتی اصلاح اور توجہ چاہتے ہیں جتنی جلدی ہم ان کو انصاف دیں گے اتنا ہی ہمارے اور پورے ملک کے مفاد میں ہے ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے وزیر اعلیٰ سیکرٹریٹ پشاور میں فاٹا انضمام کے تناظر میں خیبر پختونخوا کے انتظامی یونٹس یعنی (consolidated divisions)کے حوالے سے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا چیف سیکرٹری خیبر پختونخوا اعظم خان، ایڈیشنل چیف سیکرٹری فاٹا ، سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو ، سیکرٹری داخلہ اور دیگر متعلقہ حکام نے اجلاس میں شرکت کی۔چیف سیکرٹری اعظم خان نے فاٹا اصلاحات پر عملدرآمد کیلئے وفاقی حکام کے ساتھ اجلاس کی تفصیلات سے آگاہ کیا اور بتایا کہ وزیر قانون کی سربراہی میں ایک کمیٹی تشکیل دی گئی ہے جو آئندہ کے لائحہ عمل اور ٹی او آرز کا تعین کرے گی فاٹا میں نظام عدل ، ایف سی، ٹیکس اور مالی امور سمیت تمام مسائل پر اجلاس میں تبادلہ خیال ہوا اور تقریباً تمام وسائل پر اتفاق پایا گیا نگران وزیر اعلیٰ نے خیبر پختونخوا اور فاٹا کے انضمام کے تناظر میں خیبر پختونخوا کے انتظامی یونٹس یعنی (consolidated divisions) کا اعلامیہ جاری کرنے کی اصولی منظوری دی ۔